Call 0334-5459912 For Hijama and training in Pakistan

*حجامه اور بلڈ ڈونیشن میں فرق*

بلڈ ڈونیشن :

بلڈ ڈونیشن یا فصد سے جو خون نکلتا ھے

اس خون کا تعلق دراصل ھمارے وریدوں اور شریانوں سے ھے،
بنیادی طور اسی خون پر ھماری زندگی کا دارو مدار ھے اور انسانی جسم کا بلڈ سرکولیٹری سسٹم اسی سے بنا ھوا ھے . دل اس کا پمپنگ مشین ھے جو که اندرونی تمام اعضاء انسانی( آرگنز ), کو خون سرکولیٹ اور سپلائی کر رھا ھوتا ھے . یه بلڈ بنیادی طور پر دو بڑے اجزاء پر مشتمل ھے
(1) رڈ بلڈ سلز (2) وائٹ بلڈ سلز
نوٹ : اگر چه تفصیلی طور پر بلڈ کے بھت سارے اجزاء سرچ کیے گیے ھے . مثلا

*دم حجامه* :
یه وه جما ھوا ٹاکسنز یا خون ھے. جو لمفیٹک چینل کے ذریعے مائکرو بلڈ سرکولیشن (جو که مجموعه ھے کیپیلریز اور بلڈ ویسلز کا) میں جمع ھوا کرتا ھے .
یاد رھے لیمفیٹک سسٹم اور مائیکرو بلڈ سرکولیٹنگ سسٹم ھمارے جسم اور خصوصا نظام خون کے لیے فلٹریشن کی بمنزله ھے . وریدوں اور شریانوں کے بلڈ میں جو سلز ڈیڈ ھو جاتے ھے یا بیکٹیریاز کی وجه سے ٹاکسنز وغیره فاسد مادے بن جاتے ھیں یه اس کو فلٹر کر دیتا ھے اور کپیلریز اور بلڈ ویسلز ( شعیرات الدم ),میں جمع کر دیتا ھے ، ..

.
*بلڈ ڈونیشن* :
میں جسم سے رڈ بلڈ سلز بالکل صحیح سالم حالت میں نکلتے ھے . یعنی نارمل حالت میں نکلتے ھے اور ظاھر ھے اسی پر ھماری زندگی کا انحصار ھے .

*دم الحجامة* :

حجامه سے بیکٹیریا کی وجه سے جو اگزو ٹاکسنز بن چکے ھوتے ھے اس کی وجه سے جو رڈ بلڈ سلز ڈیڈ ھو چکے ھوتے ھے. ( جوکه ایلوپیتھک نظریے کے مطابق مرض کے باعث بنتے ھے.. اور اسی سے ھماره ریسپیررٹی سسٹم , ڈائجسٹیو سسٹم اور بسا اوقات نروز سسٹم متاثر ھوتے ھے ) نکلتے ھے .

*بلڈ ڈونیشن*:
سے 100 % وائٹ بلڈ سلز جسم نکلتے ھے . جس سے ھماری ایمیون سسٹم کمزور پڑھ جاتا ھے

” *حجامه کا بلڈ* :
سے لیباٹری ٹسٹ کے مطابق 15 % وائٹ بلڈ سلز نکلتے ھے وه بھی اینڈو ٹاکسنز کی صورت میں .
*نوٹ*
جب ھمارے جسم میں بیکٹریا یا اگزو ٹاکسنز کو کو کسی ادویه یا ویکسین کے ذریعے مارا جاتا ھے تو یھی مرا ھوا بیکٹیریا یا اگزو ٹاکسن اینڈو ٹاکسنز کی شکل اختیار کر لیتاھے . اور یھی اینڈو ٹاکسنز وائٹ بلڈ سلز پر اٹیک کر کے اسے توڑ مروڑ دیتا ھے .
اسی وجه سے ایمیون سسٹم نھایت کمزور ھو جاتا ھے )
حجامه میں یھی اینڈو ٹاکسنز بھی نکل جاتے ھے جس سے ھماره ایمیون سسٹم ( قوت مدافعت) اور مضبوط ھو جاتا ھے.

*بلڈ ڈونیشن*
سے خون میں جو آئرن کا مقدار ھوتا وه 100 % نکل جاتا ھے .
جبکه

*حجامة کا بلڈ*
سے آئرن کا مقدار 0% نکلتا ھے
اسی وجه سے حجامه کرنے سے فاسد مواد نکل کر خون میں موجود آئرن کا مقدار مزید بڑھ جاتا ھے اور یھی وجه ھے خون میں ھیموگلوبین کی مقدار بھی بڑھ جاتی ھے

*نوٹ*

100% سے مراد یہ ہے کہ اگر ایک قطرہ نکلا ہے تو اس ایک قطرے میں جتنے آئرن(آر بی سی ), ہوتا ہے وہ سب کا سب نکل جاتا ہے۔ اور حجامہ میں ایک قطرے میں آئرن بالکل کم مقدار نہ ہونے کے برابر نکلتا ہے کیونکہ اس میں نکلنے والا مادہ ڈیڈ سیلز ہوتے ہیں، جسم کا سو فیصدی مراد نہیں بلکہ خون کی نسب تناسب کے اعتبار سے بتانا مقصود ہے

حجامه تھراپسٹ
0334-5459912

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: