Call 0334-5459912 For Hijama and training in Pakistan

What is Hijama or Cupping

Cupping is a therapeutic process for removing, ‘unclean blood’ from the body. It is a form of medical treatment which has been recommended by the Prophetic tradition. Simply like removing the old oil from a car every year, we should do the same for our bodies remove the old and let the new blood replenish and refresh our bodies

Al Hijamah (Cupping Therapy) is the best remedy recommended and used by the Messenger Muhammad PBUH. The Messenger Muhammad PBUH said, “Indeed the best of remedies you have is Hijamah (Cupping)” [Saheeh al-Bukhaaree (5371)]. Messenger Muhammad PBUH also said that on the night of Israa (his ascension to the heavens) he did not pass by an angel except that it said to him, “Oh Muhammad PBUH, order your Ummah (nation) with Hijamah (Cupping).”[Saheeh Sunan Tirmidhee (3479)]. This shows the importance and greatness of this Sunnah.

 

حَدَّثَنَا نَصْرُ بْنُ عَلِيٍّ الْجَهْضَمِيُّ حَدَّثَنَا زِيَادُ بْنُ الرَّبِيعِ حَدَّثَنَا عَبَّادُ بْنُ مَنْصُورٍ عَنْ عِکْرِمَةَ عَنْ ابْنِ عَبَّاسٍ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ مَا مَرَرْتُ لَيْلَةَ أُسْرِيَ بِي بِمَلَإٍ مِنْ الْمَلَائِکَةِ إِلَّا کُلُّهُمْ يَقُولُ لِي عَلَيْکَ يَا مُحَمَّدُ بِالْحِجَامَةِ
نصر بن علی جہضمی، زیادبن ربیع، عباد بن منصور، عکرمہ، حضرت ابن عباس رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ
رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا شب معراج میں فرشتوں کے جس گروہ کے پاس سے بھی میرا گزر ہوا۔ ہر ایک نے مجھے یہی کہا۔ اے (محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) ! پچھنے لگانے کا اہتمام کیجئے ۔
( سنن ابن ماجہ:جلد سوم، پچھنے کا بیان:حدیث نمبر 358)

حَدَّثَنَا أَبُو بِشْرٍ بَکْرُ بْنُ خَلَفٍ حَدَّثَنَا عَبْدُ الْأَعْلَی حَدَّثَنَا عَبَّادُ بْنُ مَنْصُورٍ عَنْ عِکْرِمَةَ عَنْ ابْنِ عَبَّاسٍ قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ نِعْمَ الْعَبْدُ الْحَجَّامُ يَذْهَبُ بِالدَّمِ وَيُخِفُّ الصُّلْبَ وَيَجْلُو الْبَصَرَ
ابوبشربکر بن خلف، عبدالاعلی، عباد بن منصور، عکرمہ، حضرت ابن عباس رضی اللہ تعالیٰ عنہ فرماتے ہیں کہ
رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا اچھا ہے وہ بندہ جو پچھنے لگاتا ہے۔ خون نکال دیتا ہے۔ کمر ہلکی کر دیتا ہے اور بینائی کو جلاء بخشتا ہے ۔
(سنن ابن ماجہ:جلد سوم، طب کا بیان:حدیث نمبر 359)

حَدَّثَنَا جُبَارَةُ بْنُ الْمُغَلِّسِ حَدَّثَنَا کَثِيرُ بْنُ سُلَيْمٍ سَمِعْتُ أَنَسَ بْنَ مَالِکٍ يَقُولُ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ مَا مَرَرْتُ لَيْلَةَ أُسْرِيَ بِي بِمَلَإٍ إِلَّا قَالُوا يَا مُحَمَّدُ مُرْ أُمَّتَکَ بِالْحِجَامَةِ
حبارہ بن مغلس، کثیر بن سلیم، حضرت انس بن مالک رضی اللہ تعالیٰ عنہ فرماتے ہیں کہ
رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا شب معراج میں جس جماعت کے پاس سے بھی میں گزرا اس نے یہی کہا اے محمد (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) ! اپنی امت کو پچھنے لگانے کا حکم فرمائیے ۔

(سنن ابن ماجہ:جلد سوم، باب طب:حدیث نمبر 360)

یہ وہ اللہ کا حکم و سنت ہے جسے اج کل مسلمانوں نے ختم کردیا ہے۔
مگر سنگی کا علاج ہر انسان کے لیے مفید ہے، اس سے جسم کا گندہ خون نکل جاتا ہے اور صاف حون رہ جاتا ہے اور اس سے ہر قسم کا ڈپریشن، سستی، اور دوسری ہر بیماریں رفع ہوجاتی ہیں، یہاں تک کہ اگر اس کے ساتھ ورزش بھی کی جائے تو موٹاپا اور ہم قسم کی پیٹ و جسمانی بیماریاں رفع دفع ہوجائيں گی۔ ان شاءاللہ
کیونکہ یہ نہ صرف سنت ہے بلکہ اللہ کا حکم بھی ہے۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: